چیف سیکرٹری کی ایک اور دھمکی

پاکستانج مسلط شدہ چیف سیکرٹری گلگت بلتستان بابر حیات تارڈ نے گلگت بلتستان کے آفسران اور ٹھیکداروں کو دھمکی دیتے ہوئے کہا ہے “کوتاہی کے مرتکب آفسران اور ٹھیکداروں کے خلاف سخت کارووائی ہوگی” ۔ بلتستان کے عوام کے خلاف توہین آمیز رویہ اختیار کرنے کے بعد جب عوامی احتجاج ہوا تو تارڈ عوام سے معافی مانگنے اور آئندہ غیر شائستہ رویہ اختیار نہ کرنے کا وعدہ کرنے کے بجائےگلگت بلتستان کے آفیسرز اور ٹھیکداروں کو دھمکی دیتا ہے ۔ آخر گلگت بلتستان کی ڈمی اسمبلی اور نام نہاد وزیراعلیٰ اور وزراء کے جھمگٹھے کا بھی کوئی اخلاقی فرض ہے اگر قانونی نہیں تو وہ گلگت بلتستان کے آفیسرز اور ٹھیکداروں کو دھمکی دینے والے سے پوچھے کہ وہ سرعام میڈیا کے ذریعے دھمکی کیوں دے رہا ہے۔
مسلط کردہ چیف سیکرٹری کیا پاکستان سے آئے ہوئے آفیسرز سے بھی کچھ پوچھ سکتا ہے جو گلگت بلتستان آکر کرپشن کے ذریعے اور تارڈ جیسے لوگوں کی آشرباد سے کروڑوں کماکر واپس جاتے ہیں یا وہ صرف گلگت بلتستان کے ماتحت اور غیر اہم پوسٹس پر تعینات چھوٹے آفیسرز کو ہی ڈرائیں گے کیونکہ گلگت بلتستان میں جی بی کا کوئی فرزند کسی اہم عہدے پر نہیں رکھا جاتا؟

عبدالحمید خان
چئیرمین بی این ایف

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here