عمران علی خان! اگر آپ کا تعلق گلگت بلتستان سے ہے تو آپ کا پاکستان سے وفادار ہونے کی بات قانوناً جھوٹ اور فریب کے سوا کچھ نہیں۔ یہ ایسا ہی ہے کہ افغانستان کا کوئی شہری اپنے ملک سے ناراض ہو کر یہ کہے کہ وہ امریکہ کا وفادار ہے یا لندن کا۔ اسی طرح عراق کا کوئی شہری یا شام کا کوئی یہ کہے کہ وہ روس کا یا فرانس کا وفادار ہے یہ تو دنیا والے ان پر مزاق کرینگے یا انہیں بیوقوف کہیں گے کیونکہ وفاداری اور غداری کا تعلق جذبات سے نہیں مذہب سے نہیں دوستی سے نہیں کسی اور رشتے سے نہیں بلکہ شہریت سے ہے جس دھرتی پر آپ پیدا ہوئے ہیں وہاں آپ کا ووٹ ہوتا ہے وہاں کے آپ شہری ہوتے ہیں وہاں کی عدالت آپ کے لئے آزاد ہے وہاں کا پارلیمنٹ میں آپ کے نمائندگی ہیں اور پھر آپ اس کے وفادار ہوتے ہیں گلگت بلتستان کا کوئی ایک فرد بھی پاکستان کا شہری نہیں کیونکہ گلگت بلتستان پاکستان کا حصہ نہیں جس کا ریکارڈ اور مقدمہ اقوام متحدہ میں موجود ہے۔ پاکستان کا آئین بھی گلگت بلتستان کو اپنا حصہ نہیں۔ سمجھتا جس سے گلگت بلتستان کے لوگوں کا ووٹ پاکستان کے پارلیمنٹ میں نہیں ہوتا اور گلگت بلتستان کا کوئی شخص پاکستانی سپریم کورٹ نہیں جاسکتا کیونکہ گلگت بلتستان متنازعہ ہے۔
آپ پاکستان کے لئے نیک نیت دوست ہو سکتے ہیں لیکن وفادار نہیں ہوسکتے اور آپ پر گلگت بلتستان کی وفاداری فرض بھی ہے اور لازم بھی۔ اگر آپ گلگت بلتستان کے وفادار نہیں تو اس کا مطلب یہ ہے کہ آپ اپنی دھرتی کے وفادار نہیں بلکہ غدار ہے آپ کو گلگت بلتستان کے ساتھ ناسمجھی میں غداری نہیں کرنی چاہئے جو آپ کا اور آپ کے اباواجداد کا وطن ہے
عبدالحمید خان
چیئرمین بی این ایف

 

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here